358

بچوں کے ساتھ جنسی درندگی کیوں اور کیسے ھو رھی ھے ایک سنسنی خیز تجزیہ

پاکستان۔ میں بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی اور ان کے قتل اور تشدد کے بڑھتے واقعات
اس کی وجوہات کیا ھیں
پاکستان میں ضلع قصور میں پہلا واقعہ جو بہت مشہور ھوا وہ ایک معصوم بچی زینب کا واقع تھا جس کے ساتھ جنسی درندگی ھوئی اس کے بعد اسے بے رحمی سے قتل کر دیا گیا
قاتل اس کا ہمسایہ عمران نامی شخص تھا جس کو بعد میں پھانسی ھو گئی

اس وقت یے واقع سے ھٹ کر ھم بات کریں گے کے یے ظلم کس لئے اور کیوں ھو رھا ھے
اس سارے قصے میں ایک ویب سائٹ جس کا بہت زیادہ زکر ھو رھا ھے وہ ھے ڈارک ویب سائٹ

پورن ویب سائٹ تو آپ نے سنی ھونگی
یے ڈارک ویب سائٹ کیا ھے
اس میں بچوں سے جنسی زیادتی کر کے انہیں موت کے گھاٹ اتارا جاتا ھے
مرتے وقت ان کے معصوم چہروں پر جس قسم کی خوف اور دھشت ھوتی ھے
یے ڈارک ویب سائٹ والے اسے ھزاروں ڈالر دے کر دیکھتے ھیں
ان سے ان کی جنسی بھوک مٹتی ھے
سڈنی شیلڈن کا ایک مشہور زمانہ ناول ھے بلڈ لائن اس میں بھی نواب ایک طوائف اور ایک ملازم کو لے کر انہیں جنسی تعلق پر مجبور کرتا ھے اور پھر جب عورت عین عروج پر ھوتی ھے تو اس کا گلا گھونٹ دیتا ھے
اس سے عورت کے چہرے پر بیک وقت موت اور جنسی تسلی کا تاثر ابھرتا ھے جس سے دیکھنے والا اپنی تسکین کرتا ھے
اس کے بعد عورت کی لاش دریا برد کر دی جاتی ھے
پاکستان میں یے کام بچوں کو اغوا کر کے ان کے ساتھ بدترین جنسی زیادتی اور پھر ان کو تشدد کے بعد موت کے گھاٹ اتار دیا جاتا ھے
قصور سے تازہ گمشدہ تین بچوں کی بدترین حالت میں لپٹی لاشیں ملی ھیں
یہاں یے سوال بنتا ھے کے تینوں بچے مختلف تواریخ میں اغوا ھوئے پولیس نے پہلے بچے کے اغوا کے بعد کوئی ایسا جال نھیں بچھایا جس سے بچوں کی حفاظت کا کوئی بندوبست ھو
ایک بچے کی لاش درست حالت اور دو بچوں کی محض ھڈیاں ملی ھیں

یہاں ابھی تازہ خبر ھے کے دو بچے مزید اغوا ھوئے جن میں سے ایک بچہ مجرم چھوڑ کر بھاگ گئے دوسرے بچے کے بارے میں پولیس لاعلمی کا اظہار کر رھی ھے
اس کے لئے ھمیں فوج کے سراغرساں اور آئی ایس آئی کے چیف کو درخواست کرنی ھو گی
عدلیہ اس پر فوری نوٹس لے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں